Category: Urdu

The theological reasons for excluding women cannot be founded on Scripture or Tradition

If you can’t read this font click here.

The theological reasons for excluding women cannot be founded on Scripture or Tradition

مقدس احکامات کے موافق عورت کے متثنیٰ ہونے کی الہٰیاتی وجوہات کلام، روایت اور الہٰیات کی تردید کرتے ہیں۔

وجوہات عورتوں کے منتخب نہ ہونے کے لیے اُنہیں باز رکھنے کے لیے ثبوت پیش کرتے ہیں۔ روم میں ایمان کی تعلیم کے لیے جماعت سادہ طرح غلط ہے۔

اِن دعووں اور تردید کی تفصیل کے ساتھ وضاحت کے لیے، مہربانی سے ہماری یہاں پائی گئ خوش طبع بحث کا معائنہ کیئجے۔

یہاں ہم چند واضح حقیقتوں کی نشاندہی کریں گے۔

1۔یسوع نے عورت کو اپنے معاشرے میں مساوی درجہ دیا، اور اُصولی طور پر، اُنہیں آدمیوں کی طرح، اپنے یوخرست کا احاطہ کرنے کے لیے اختیار دیا۔

 
 

2۔ کم ازکم 9ویں صدی عیسوی تک چرچ نے عورت کو مخصوصیت کا مکمل ساکرامنٹ دیا۔

3۔ عورتوں کے بپتسمہ کے ذریعے، آدمیوں کی طرح، وہ خُدا کے متبنی(منہ بولے) بچے بنے۔

یہ آدمیوں سے کمتر نہ ہونے والی راغب خواتین کو مقدس احکامات کو شامل کرتے ہوئے تمام ساکرامنٹس کا حاصل کرنا تھا۔

“لیکن روم یقیناَ اِس بے خطا کا اعلان کرچُکا ہے۔”

Why we challenge the teaching authority Frequently asked questions Next?
culture shift the facts history true loyalty sense of faith
feminism? infallible? credibility? obedience? undermining?
What are the ‘rights’ of Catholics in the Church?
Do you have any questions for us? __Suggestions? __Remarks?

Wijngaards Institute for Catholic Research

The Institute is known for issuing academic reports and statements on relevant issues in the Church. These have included scholars’ declarations on the need of collegiality in the exercise of church authority, on the ethics of using contraceptives in marriage and the urgency of re-instating the sacramental diaconate of women.

Visit also our websites:Women Deacons, The Body is Sacred and Mystery and Beyond.

You are welcome to use our material. However: maintaining this site costs money. We are a Charity and work mainly with volunteers, but we find it difficult to pay our overheads.


Visitors to our website since January 2014.
Pop-up names are online now.

The number is indicative, but incomplete. For full details click on cross icon at bottom right.


Please, support our campaign
for women priests

Join our Women Priests’ Mailing List
for occasional newsletters:

Email:
Name:
Surname:
City:
Country:
 
An email will be immediately sent to you
requesting your confirmation.


 

Has the Church never ordained women?


کیا کبھی کلیسیاء نے عورتوں کو مخصوص کیا ہے؟

پہلی صدیوں سے اب تک ہمارے وقت میں یہ عمل کبھی نہیں درہرایا گیا کہ عورتوں کو کلیسیاء کہانت کے لیے مخصوص کیا ہو؟

بین الا دستخطی 6-8،23

The Congregation for Doctrine in Rome

روم میں ایک جماعت کے لیے ہدایت نامہ

ہاں، کچھ عورتوں نے پہلی صدیوں میں منسٹریز میں اپنا کاہنی کردار ادا کیا ہے، لیکن کچھ منسٹریر کی خواتین کا ساکرامنٹل کہانت کے طور پر تعلق نہیں تھا۔

بین الادستخطی 57،71-77

Background music?

 

کچھ توقعات میں سے، جب عورتوں کو کہانت کے لیے مخصوص نہیں کیا گیا، جی ہاں!

یہ صرف اُس وقت واقعہ ہوتا ہے کیونکہ تعصب اِس تفریحی سفر کو ناکام کردیتا ہے ۔

عورتیں شناخت میں آجاتی ہیں:  

* کم مرتبہ فطرتی طور پر اور قانونی طور پر؛

* ریاست میں گناہ کی سزا کے لیے؛

* مذہبی رسوم میں ناپاک!

مہربانی سے! سچی باتوں کو پڑھیں

معاشرتی تعصب بغص میں، ایمان کے عقیدے ہمیں یہ بتاتے ہیں کہ آدمی اور عورت مسیح میں برابر ہیں۔ وہ جانتے ہیں، اُن کے دلوں دِل میں، کہ عورتیں کاہن ہوسکتی ہیں۔ وہ اِس کو بالقوہ رسم کہتےہیں۔

کچھ بالقوہ رسم کی اِمثال یہ ہیں:

* انتہائی مضبوط بات کہ مریم ایک کاہن تھی؛

ایک اور کہ مریم مکدلینی جو کہ خواتین کی منسٹر تھی۔

‘Le sacerdoce de la Vierge’ (close up), early 15th century, school of Amiens, France.

آخر اخیر نہیں ہے، نویں صدی میں کلیسیاء نے عورتوں کو مقدس حکم سے جب اُس نے اُن کو ڈیکنز کے لیے مخصوص کیا۔

 

مخصوصیت کا حق، دائیں ہاتھ پر دھوکے کے ساتھ اوررُوح پاک کی التجا کرنا، یہ اِسی طرح آدمیوں اور عورتوں دونوں کے لیے تھا۔

 

عورتیں بھی ساکرامنٹل ایاز کو وصول کرتیں ہیں۔

 

تاہم، رسم ورواج عورتوں کو کہانت کے لیے منع نہیں کرسکیتں۔


Go to the next step?

 

You are in a simplified, pictorial mode.
To switch to academic mode, click here!


Wijngaards Institute for Catholic Research

The Institute is known for issuing academic reports and statements on relevant issues in the Church. These have included scholars’ declarations on the need of collegiality in the exercise of church authority, on the ethics of using contraceptives in marriage and the urgency of re-instating the sacramental diaconate of women.

Visit also our websites:Women Deacons, The Body is Sacred and Mystery and Beyond.

You are welcome to use our material. However: maintaining this site costs money. We are a Charity and work mainly with volunteers, but we find it difficult to pay our overheads.


Visitors to our website since January 2014.
Pop-up names are online now.

The number is indicative, but incomplete. For full details click on cross icon at bottom right.


Please, support our campaign
for women priests

 

Join our Women Priests’ Mailing List
for occasional newsletters:

Email:
Name:
Surname:
City:
Country:
An email will be immediately sent to you
requesting your confirmation.

 


 

 

As carriers of inerrancy the faithful reject the exclusion of women

If you can’t read this font click here.

As carriers of inerrancy the faithful reject the exclusion of women

مُقدس(واجب التعظیم) منسٹریز سے عورت کی وفادار ناپسند ممانعت کو غلطیوں پاک بوجھ کو لیجانے کے طور پر

پوپ اور پشپس کے ہم منصب اپنی با اختیار تعلیم کے ذریعے ایمان کے معاملات اور اخلاقیات کو جوڑنے میں بہت فیصلہ کن کار منصب رکھتے ہیں۔ بہر حال ، خُدا کے تمام لوگوں کی بے خطائی میں یہ مشق اصل وجہ ہے، کسی دوسرے طریقے کے بارے نہیں۔

ویٹیکن دوم کے دوران پیش کی گئ تجویز کی اصلاح جسے وہ حاکمیت کو غلطیوں سے پاک چاہتا تھا لوگوں کے غلطیوں کے مبرا ذرائع کو کونسل سےروایات کے برعکس ہونے کے طور پر رد کر دیا گیا تھا۔

اختیار کے ساتھ تعلیم۔ کلیسیاء میں حاکمیت کے ,pp 198-199 R.R Gaillardetz,Acta Synodalia 111/1ویٹیکن دوم۔   

Liturgical Press 1997.p. 154ساتھ الہٰیات

“ایماندار کے بدن کو کامل کے طور پر مسح کیا گیا ہے جیسے کہ وہ قدوس کے ذریعے ایمان کے معاملات میں غلطی نہیں کرسکتے ہیں۔”دیکھیے 1یوحنا 2 :20-27

Vatican II, Lumen Gentium, § 12

خُدا کے لوگ ایمان کے لیے نا کام ہونے کے بغیر قائم رہتے ہیں جب ایک بار یہ مقدسین کو سپرد کر دِیا جاتا ہے، اِسے درست معرفت کے ذریعے گہرے طور پر چھیدا جانا ہے، اور اِسے مزید پوری طرح سے زندگی پر لاگو کیا جاتا ہے۔

Vatican II, Lumen Gentium, § 12

مافوق الفطرت ایمان کی سمجھ کے لیے شکر یہ جو لوگوں کو کامل کے طور پر موسوم کرتا ہے، یہ اِس بے خطا خصوصیت کو عیاں کرتا ہے جب پشپس کی جانب سے عام لوگوں کے آخری رُکن کو نیچا کیا جاتا ہے، یہ ایمان اور اخلاقیات کے معاملات میں عالمگیر ہم آہنگی کو دکھاتا ہے۔

Vatican II, Lumen Gentium, § 12

بہت سے ممالک میں کیتھولکس کے مابین آراء دکھاتی ہیں کہ تجربہ کار کیتھولکس کی وسیع اکثریت یقین رکھتی ہے کہ عورت کو معین کیا جانا چاہیے۔

ہم نے یہاں عدادوشمار نمائندہ کار کی تعداد کو چھایا ہے۔ اوسط (فیصد)کیتھولکس کی تعداد کی طرف اشارہ کرتی ہے جو عورت کے مخصوص کئے جانے کی مدد کررہے ہیں۔

Great Britain Canada Spain Portugal Netherlands Germany Italy Australia Ireland USA
65% 66% 74% 71% 86% 71% 58% 62% 67% 68%

کیتھولک تعلیم کی قناعت نہیں ہوگی، اور نہ ہونی چاہیے، اکثریتی ووٹ سے فیصلہ کیجئے۔
مکمل ماخد اِس میں پیش کئے گئے ہیں؛ ‘کیتھولک کلیسیاء میں عورت کی مخصوصیت’ .pp 44-47,کُو کُو (خوش آواز پرندہ) کے انڈے سے نقاب اُتارے کی روایت، لندن اور نیویارک 2001

برطانیہ     کینڈا     سپین     پرُتگال    نیدر لینڈ    جرمنی    اٹلی    آسٹریلیا     آئرلینڈ      امریکہ

لیکن مندرجہ بالا عدادوشمار دکھاتے ہیں کہ بہت ، بہت سارے سوچنے والے، عملی اور پابند کیتھولکس ثابت قدمی سے قائل ہیں کہ یہاں عورت کے مخصوص کئے جانے کے خلاف موزوں وجوہات نہیں ہیں۔ وہ بھی غلطیوں سے مبرا روایت کو لے جانے والی ہیں۔

“کیا ہم پیشوائی کے اختیار کو تباہ کررہے ہیں”۔

Why we challenge the teaching authority Frequently asked questions Next?
culture shift the facts history true loyalty sense of faith
feminism? infallible? credibility? obedience? undermining?
What are the ‘rights’ of Catholics in the Church?
Do you have any questions for us? __Suggestions? __Remarks?

Wijngaards Institute for Catholic Research

The Institute is known for issuing academic reports and statements on relevant issues in the Church. These have included scholars’ declarations on the need of collegiality in the exercise of church authority, on the ethics of using contraceptives in marriage and the urgency of re-instating the sacramental diaconate of women.

Visit also our websites:Women Deacons, The Body is Sacred and Mystery and Beyond.

You are welcome to use our material. However: maintaining this site costs money. We are a Charity and work mainly with volunteers, but we find it difficult to pay our overheads.


Visitors to our website since January 2014.
Pop-up names are online now.

The number is indicative, but incomplete. For full details click on cross icon at bottom right.


Please, support our campaign
for women priests

Join our Women Priests’ Mailing List
for occasional newsletters:

Email:
Name:
Surname:
City:
Country:
 
An email will be immediately sent to you
requesting your confirmation.


 

The teaching authority has made many serious mistakes in similar cases of presumed ‘doctrine’

If you can’t read this font click here.

The teaching authority has made many serious mistakes in similar cases of presumed ‘doctrine’

تربیتی اختیار نے قیاس کی گئ’تعلیم’ کے معاملات میں بہت سنجیدہ غلطیاں کیں

تربیتی اختیار بدعتوں کے خلاف ایمانی معاشرے کی پاسبانی کرتا ہے۔ یہ ہماری عزت کا مستحق ہے۔ لیکن تاریخ دکھاتی ہے کہ تربیتی اختیار نے عدالت (انصاف) کی سنجیدہ غلطیاں کی ہیں، اور کرسکتا ہے۔

یہ غلطیاں تہذیبی تغیر میں کثرت سے رُونما ہوئیں۔ تربیتی اختیار نے اکثر روایتی نظریات اور عمل کاموں کو پُرانا قرار دِیا جس کی ناعاقبت اندیشی سے شناخت مسیحی ایمان کے جوہر کے ساتھ تھی۔

کچھ مثالوں کا مطالعہ کرنا سبق آموز ہے:۔

 

جب یورپ میں ساہو کاری شروع ہوئی، کاروبار نے پیسے کے قرضے پر سود کا تقاضا کرنا شروع کیا۔ جیسا کہ آج ہم سب کرتے ہیں۔ پرانے عہد نامے کے قوانین کی جانب جاتے ہوئے، چرچ نے اِس کی معانت (منع) کی۔

کی دوسری کونسل نے(139عیسویٰ) میں ہدایت کی کہ اشخاص جو سود لیتے ہیں” وہ ساکرامنٹ میں شاملLateranنہیں ہونگے” اور :”اِس معاملے میں وہ اپنی غلطی کو واپس نہیں لیتے اُنہیں متبرک کفن دفن سے انکار کرنا چاہیے تھا۔”

حاکمیت کو منسوخ کرنے میں رکاوٹ صرف 1830میں تھی۔چھ ممالک میں پیش روی کرنے کے دوران بہت سارے تجارت کا اور اُن کے خاندان چرچ سے باہر زندہ ہے اور مرے۔

 

1988تک پوپس اور اُن کے دفاتر نے غلامی کے قانون کا سامنا کیا!

فادرز، چرچ اراکین، پوپس اور ماہر الہٰیات نے اِس غلامی کو قائم رکھا، یہ شرعی طور پر مالک ہوسکتے، خرید سکتے اور بیچ سکتے تھے۔

نے اب بھی 20جون 1866میں اعلان کیا:”غلامی بذات خود، اپنی The Congregation for Doctrine in Rome

فطرت کے طور پر قیاس کی جاتی ہے یہ فطرتی قانون یا خُدا کے قانون کے برعکس نہیں ہے۔ یہاں غلامی کے بے شمار موضوعات ہوسکتے ہیں۔۔۔۔۔یہ فطرتی اور الہٰی قانون کے خلاف ہیں غلام کے بیچے جانے، خریدے، تبدیل یا دئیے جانے کے بارے۔

 

Catholic bishops, theologians and activists who campaigned for abolition were branded as ‘troublemakers’ and ‘heretics’.

کم از کم 1854تک، چرچ کی سرکاری تعلیم یہ تھی کہ چرچ سے باہر نجات نہیں تھی:۔

نہ صرف پوپس اور ماہر الہٰیات نے اِس کا سرکاری تعلیم کے طور پر اعلان کیا۔ اِسے چرچ کونسل کے ذریعے ایمان کے قاعدے کے طور پر بیان کرتے ہوئے دیکھا گیا۔

کے زیر سایہ اعلان کیا کہ: پاک رومن کلیسیاء۔۔۔۔۔ثابت قدمیEugeneکی کونسل نے 1442میں پوپ 15Florenceسے ایمان رکھتی ہے، اعتراف اور منادی کرتی ہے کہ کیتھولک کلیسیاء سے باہر کوئی ایک بھی بچہ کھچا، ناصرف وہ جو خُدا کو نہیں مانتے(کافر) بلکہ یہودی بھی، بدعتی یا تفرقہ انداز، ابدی زندگی میں شامل ہونے والے نہیں بن سکتے، لیکن وہ ‘ابدی آگ میں جائیں گے جسے شیطان اور اُس کے فرشتوں کے لیے تیار کیا گیا ہے'(متی 41:25)، جب تک اُن کی زندگی کا اختتام نہیں ہو جاتا وہ اِسے حاصل کرتے رہیں گے۔ چرچ کے گروہ کے لیے موافقت بہت اہمیت رکھتی ہے کہ چرچ کے ساکرامنٹس صرف اُن کے لیے مددگار ہونگے جو اِس میں باقی رہیں گے، اور روزے، خیرات دینا، اور پرہیز گاری کے دورسرے کام، اور جنگجو مسیحی زندگی کی مشقوں کے لیے صرف وہی ابدی صلہ حاصل کریں گے۔ اور کوئی بھی نجات یافتہ نہیں بن سکتا، یہاں تک کہ اگر وہ یسوع کے نام پر اپنا خون بہائے، جب تک کہ وہ کیتھولک چرچ کے اتحاد اور گود میں باقی نہیں رہتا

کے مکمل نظر انداز کئے جانے Pluriformityیہ نام نہاد تعلیم، اب ویٹیکن دوم سے منسوخ ہوگئی تھی،یہ مذاہب کی سے اُٹھ کھڑی ہوئی اِس نے چرچ سے باہر خُدا کے جلالکے تجربے کو نظر انداز کیا۔

معاملے کے حقیقت یہ ہے کہ حاکمیت مستقل طور پر وقتوں کے پیچھے رہی ہے: سرمایہ کے قرض پر سود لینے کے سوال میں، زمین کے سورج کے گرد چکر کاٹنے پر، ارتقاء پر، مقدس کلام کے اختیار پر، جمہوریت پر، تجارتی یونین پر، مذہبی آزادی پر، کم از کم 64سوالات پر۔ جو بھی جدید حقیقت پھوٹتی ہے، روم پہلے اِسے غلط لیتا ہے۔ کیا اب یہ مافع حمل اشیاء پر پابندی، اختیاری کنوار پن اور عورت کی مخصوصیت پر اِسی غلط راستے کی پیروی نہیں کرتا؟

Why we challenge the teaching authority Frequently asked questions Next?
culture shift the facts history true loyalty sense of faith
feminism? infallible? credibility? obedience? undermining?
What are the ‘rights’ of Catholics in the Church?
Do you have any questions for us? __Suggestions? __Remarks?

Wijngaards Institute for Catholic Research

The Institute is known for issuing academic reports and statements on relevant issues in the Church. These have included scholars’ declarations on the need of collegiality in the exercise of church authority, on the ethics of using contraceptives in marriage and the urgency of re-instating the sacramental diaconate of women.

Visit also our websites:Women Deacons, The Body is Sacred and Mystery and Beyond.

You are welcome to use our material. However: maintaining this site costs money. We are a Charity and work mainly with volunteers, but we find it difficult to pay our overheads.


Visitors to our website since January 2014.
Pop-up names are online now.

The number is indicative, but incomplete. For full details click on cross icon at bottom right.


Please, support our campaign
for women priests

Join our Women Priests’ Mailing List
for occasional newsletters:

Email:
Name:
Surname:
City:
Country:
 
An email will be immediately sent to you
requesting your confirmation.


 

Theologians and the faithful have a duty in conscience to voice their disagreement

If you can’t read this font click here.

Theologians and the faithful have a duty in conscience to voice their disagreement

ماہرالہٰیات اور وفادار دِل میں اپنی نااتفاقی کی آواز کو رکھتے ہیں جب تربیتی اخیتار ناکام ہوتا ہے

یہاں تصور کرنے کے اختیار میں اُن کے لیے رُجحان ہے کہ اُنہیں دوسروں کی نصیحت سُننے کی ضرورت نہیں۔ یہ ماضی میں سجنیدہ غلطیوں کا متعدد بار سبب رہا ہے۔

چرچ اِسے واضح کر چُکا ہے کہ سارے وفادار، اور خاص ماہر الہٰیات، اُن معاملات میں جن میں وہ علم یا تجربہ رکھتے ہیں اپنے اعتراضات کی آواز کو بلند کرنے کا حق رکھتے ہیں۔

 

“آئیں اِس کی پہچان کرتے ہیں کہ سارے وفادار، خواہ یہ پریسٹ ہوں یاں عام شخص، چھان بین کی شرعی آزادی پر قابض ہونے کی آزادی، سوچ کی آزادی اور اُن معاملات میں جن میں وہ فراغت سے لُطف اندوز ہوتے ہیں انکساری اور تحمل کے ساتھ اُن کے ذہنوں کا تجربہ کرنے کی آزادی”۔

Second Vatican Council,
Gaudium et Spes § 62

“علم، فراغت اور فضیلت جس پر وہ قابض ہیں کے ساتھ باہمی رضامندی میں، ایک مسیحی ایماندار کے پاس حق ہے اور یہاں تک کہ کئی دفعہ مقدس پاسٹر کو اُن معاملات پر اپنی رائے جو چرچ کی اچھائی سے نسبت رکھتی ہے اُسے عیاں کرنے کا کام ہے۔ وہ اپنی رائے کو دوسرے مسیحی اےماندار کے لیے جاننے کا حق بھی رکھتے ہیں، اپنے پاسٹر کی جانب ایمان اور اخلاقیات اور عزت کی سالمیت کو دھیان میں لانے کے لیے۔”

عوام الناس کی رائے کے بڑھنے میں بولنے کی آزادی ایک عام حقیقت ہے جو معاشرے میں خیالات اور ردِعمل کے مزید موثر گھیراؤ کو بیان کرتی ہے۔

Catholic Church Law,
canon 212, § 3 .

 

حاکمیت تنقیدی اور سخت الہٰیاتی مطالعہ اور ماہر الہٰیات کی پر جوش شرکت سے بڑے فائدے کو پیش کرتا ہے۔۔۔الہٰیاتی مدد کے بغیر حاکمیت بلاشبہ ایمان کی حفاظت کرسکتی اور اُسے سکھا سکتی ہے۔ لیکن مکمل علم اور بلندی پر صرف مشکل سے پہنچتی ہے، اِسے اپنے کام کرنے کی ضرورت ہوتی ہے، ابھی تک یہ اِس سے باخبر ہے کہ اِسے مکاشفہ یا الہام کے ساتھ وقف نہیں کرنا ہے بلکہ صرف رُوح القدس کی مدد سے”۔Communio et Progressio,
29 January 1971

“The magisterium draws great benefit from critical and industrious theological study and from the cordial collaboration of the theologians . . . Without the help of theology the magisterium could undoubtedly preserve and teach the faith, but it would arrive only with difficulty at the lofty and full knowledge it needs to perform its task, since it is aware that it is not endowed with revelation or the charism of inspiration but only with the assistance of the Holy Spirit.”
اکتوبر 1966VIپوپ پال

 

“پھر اندھی فرمانبرداری کے بارے کیا ہے؟”

Catholic Church Law,
canon 218.

“پھر اندھی فرمانبرداری کے بارے کیا ہے؟”

Why we challenge the teaching authority Frequently asked questions Next?
culture shift the facts history true loyalty sense of faith
feminism? infallible? credibility? obedience? undermining?
What are the ‘rights’ of Catholics in the Church?
Do you have any questions for us? __Suggestions? __Remarks?

Wijngaards Institute for Catholic Research

The Institute is known for issuing academic reports and statements on relevant issues in the Church. These have included scholars’ declarations on the need of collegiality in the exercise of church authority, on the ethics of using contraceptives in marriage and the urgency of re-instating the sacramental diaconate of women.

Visit also our websites:Women Deacons, The Body is Sacred and Mystery and Beyond.

You are welcome to use our material. However: maintaining this site costs money. We are a Charity and work mainly with volunteers, but we find it difficult to pay our overheads.


Visitors to our website since January 2014.
Pop-up names are online now.

The number is indicative, but incomplete. For full details click on cross icon at bottom right.


Please, support our campaign
for women priests

Join our Women Priests’ Mailing List
for occasional newsletters:

Email:
Name:
Surname:
City:
Country:
 
An email will be immediately sent to you
requesting your confirmation.


 

Feminist issue?

If you can’t read this font click here.

Feminist issue?

نسوانی معاملہ؟

Background music?

“یہ مثالی نسوانی معاملہ ہے۔

عورتیں ہمارے دور میں تیزی اور سختی سے مطالبات کررہی ہیں! یہ کام کی جگہ پر ٹھیک ہے، لیکن یقیناَ چرچ میں نہیں!”

معاف کرنا، میرے دوست!

یہ الہٰیاتی سوال ہے۔ یہ سارے چرچ کی صحت اور زندگی پر اثر انداز ہوتا ہے!”

یہ بجا ہے کہ عورت سے چھٹکارے کےلیے جدوجہد نے چرچ میں عورت کے مقام کی طرف توجہ مبذول کرنے میں مدد دی۔ لیکن بنیادیں تاریخ میں واقع ہیں۔”

ماضی میں تہذیبی بنیاد کے ذریعے چرچ میں عورت کی مساوی حقےقت کی اصل غیر واضح تھی!

تم عورتیں تعلیم کو اپنے لیے موزوں ہونے کےلیے تبدیل کرنا چاہتی ہیں۔

ہم اپنی ناقابل تبدیل مقدس روایات کے وفادار بننے کی انہیں چنتے ہیں۔

چرچ اپنی تعلیم کو محضسیاسی طور پر درستگی یا چند نسواں کو خوش کرنے کےلیے تبدیل نہیں کرسکتا!”

غلط!

ہمیں تعلیم تبدیل کرنے کی ضرورت نہیں۔

جسے تبدیل کرنے کی ضرورت ہے وہ آپ کی الہٰیاتی تعصب ہے۔

Why we challenge the teaching authority Frequently asked questions Next?
culture shift the facts history true loyalty sense of faith
feminism? infallible? credibility? obedience? undermining?
What are the ‘rights’ of Catholics in the Church?
Do you have any questions for us? __Suggestions? __Remarks?

Wijngaards Institute for Catholic Research

The Institute is known for issuing academic reports and statements on relevant issues in the Church. These have included scholars’ declarations on the need of collegiality in the exercise of church authority, on the ethics of using contraceptives in marriage and the urgency of re-instating the sacramental diaconate of women.

Visit also our websites:Women Deacons, The Body is Sacred and Mystery and Beyond.

You are welcome to use our material. However: maintaining this site costs money. We are a Charity and work mainly with volunteers, but we find it difficult to pay our overheads.


Visitors to our website since January 2014.
Pop-up names are online now.

The number is indicative, but incomplete. For full details click on cross icon at bottom right.


Please, support our campaign
for women priests

Join our Women Priests’ Mailing List
for occasional newsletters:

Email:
Name:
Surname:
City:
Country:
 
An email will be immediately sent to you
requesting your confirmation.


 

Infallible Teaching?

If you can’t read this font click here.

Infallible Teaching?

غلطیوں سے مّبرہ تعلیم

جی ہاں!

ایمان کی تعلیم کے لیے جماعت اِس غلطیوں سے مّبرہ تعلیم کا اعلان کر چُکی ہے!!!

،ایمان کی تعلیم کے لیے مقدس جماعت کا سربراہ بیان کرتا ہے کہ:Ratzingerکارڈینل

اِس تعلیم کو معمولی اور عالمگیر حاکمیت کے ذریعے بے خطا ہونے کے لیے ترتیب دیا جا چُکا ہے۔”


شک کے لیے جواب، 28اکتوبر 1995۔


شک کے لیے جواب، 28اکتوبر 1995۔

کیا وہ بلاشبہ تھا؟ غلطی سے پاک رہا؟

معمولی اور عالمگیر حاکمیتدُنیا میں تمام کیتھولک بشپس کی اکٹھی تعلیم کا حوالہ پیش کرتی ہے۔

لیکن متحداستفیٰ نے اِس تعلیم کو بھی نہیں سکھایا۔”

جاری (برقرار )رکھیئے!

دُنیا بشپس کی زیادہ تر اکثریت یہ یقین رکھتی ہے کہ عورتیں مخصوص نہیں ہوسکتیں۔

ہم یہ اچھی طرح جانتے ہیں کیونکہ وہ چُنے ہوئے تھے، کیونکہ وہ اِس نقطے پر پوپ کے ساتھ متفق تھے!”

دوبارہ غور کیئجے!

ایسا ہوسکتا ہے کہ دُنیا کے تمام بشپس اپنے ایمان کی رائے کے طور پر اے تھا میں۔ یہ

(عام نظریے) کے طور پر جانا جاتا ہے۔Opinio Communis

کا کچھ مطلب نہیں ہے۔Opinio Communisکلیسیائی تعلیم کی اصطلاحات میں

کئ برس پہلے زیادہ تر بشپس نے پھر بھی ارتقاء کو رد کیا۔ اُن دنوں تمام ثابت قدمی سے یقین رکھتے تھے کہ دُنیا چھ دنوں میں خلق کی گئ تھی! اِس کا یہ مطلب نہیں کہ یہ اُن کی متفق(اکٹھی۔متحد) تعلیم تھی۔

پھر کس نے اِسے متحد تعلیم بنایا؟

کیا ویٹکین دوم نہیں کہتی:’بشپس، رومی پاپائے اعظم کے ساتھ شراکت کی تعلیم میں، تمام لوگوں سے الہٰیات کے گواہ اور کیتھولک سچائی کے طور پر قابلِ عزت ہیں،؟


Lumen Gentium § 25b.

اچھا، پوری عبارت کو پڑھیے!

ویٹکین دوم کہتی ہے:بشپس مسیح کی غلطیوں سے مّبرہ تعلیم کی منادی کرتے ہیں، یہاں تک کہ دُنیا میں پھیلے ہوئے ہیں، وہ اپنے اور پطرس کے جانشین کے ساتھ شراکت کو قائم رکھتے ہیں، وہ قابلِ اعتماد طریقے سے ایمان اور اخلاقیات کے معاملات سکھاتے ہیں، اور ایک حالت کو فیصلہ کن طور پر متفق ہوتے ہوئے تھامے رکھتے ہیں‘۔

Lumen Gentium § 25b.

اِس لیے پانچ حالتوں کی ضرورت ہے:

1:مربوط کرنے کا عمل

یہ واضح ہے کہ بشپس کو لازماَ ایک گروہ کے طور پر تربیتی اختیار کے عمل میں مبتلا ہونا ہے۔

2: منصف کے طور پر۔

بشپس کو لازماَ اپنی قیاس کی ہوئی رائے کو بیان کرنے کی آزادی ہونی چاہیے۔

3: پورے چرچ کے ایمان کی خدمت میں۔

کو سُننا چاہییے۔Sensus Fideliumبشپس کو لازماَ کے کلام اور

4: ایمان اور اخلاقیات کے متعلق۔

تعلیم یقیناَ ایمان کے متعلق معاملات کے لیے ہونی چاہیے۔

5: تعلیم میںفیصلہ کنکو جان بوجھ کر نافذ کرنا۔

بشپس تعلیم کو فیصلہ کن طور پر قبضہ میں کرنے کے لیے لاگو کرنا چاہتے ہیں۔

 

اِن پانچوں صورتوں میں سے ایک بھی نہیں ملتی تھی!”

کے خلاف آپ اپنی رائے قائم کیئجے؟Ratzingerاِس کارڈینل

کس اختیار پر آپ کی اپنی تشخیص کی بنیاد ہے؟!”

کے غلطیوں سے پاک Ratzingerپوری دُنیا کے اونچے درجے کے ماہر الہٰیات نے کارڈینل

دعوے کو رد کیا۔

.

  1. The Catholic Theological Society of America
  2. Nicholas Lash, professor of divinity, Cambridge University, UK
  3. Francis A. Sullivan SJ, emeritus professor Gregorian University Rome
  4. Elizabeth A. Johnson, C.S.J., professor of theology at Fordham University, New York
  5. Gisbert Greshake, professor of theology at the University of Freiburg, Germany
  6. Ann O’Hara Graff, professor of theology at Seattle University, Washington
  7. Peter Hünermann, professor of theology at Tübingen University, Germany
  8. Sidney Cornelia Callahan, pastoral theologian, USA
  9. David Knight, pastoral theologian, Memphis, USA
  10. Richard Gaillardetz, associate professor, University of St. Thomas, Houseton, USA
  11. Klaus Nientiedt, ‘How Binding? “Ordinatio sacerdotalis” unleashes debate on the Magisterium’, Herder Korrespondenz 9 (1996) pp. 461-466.
  12. John H. Wright, ‘That all doubt may be removed’, America 171 (July 30-Aug. 6, 1994) pp. 16-19.
  13. Fr. Joseph Moingt SJ, editor of Recherches de Science Religieuse.
  14. Hugh O’Regan, editor of the on-line magazine, San Fransico Bay Catholic.
  15. The commission on “Woman and the Church” of the Belgian Bishops’ Conference

Why we challenge the teaching authority Frequently asked questions Next?
culture shift the facts history true loyalty sense of faith
feminism? infallible? credibility? obedience? undermining?
What are the ‘rights’ of Catholics in the Church?
Do you have any questions for us? __Suggestions? __Remarks?

Wijngaards Institute for Catholic Research

The Institute is known for issuing academic reports and statements on relevant issues in the Church. These have included scholars’ declarations on the need of collegiality in the exercise of church authority, on the ethics of using contraceptives in marriage and the urgency of re-instating the sacramental diaconate of women.

Visit also our websites:Women Deacons, The Body is Sacred and Mystery and Beyond.

You are welcome to use our material. However: maintaining this site costs money. We are a Charity and work mainly with volunteers, but we find it difficult to pay our overheads.


Visitors to our website since January 2014.
Pop-up names are online now.

The number is indicative, but incomplete. For full details click on cross icon at bottom right.


Please, support our campaign
for women priests

Join our Women Priests’ Mailing List
for occasional newsletters:

Email:
Name:
Surname:
City:
Country:
 
An email will be immediately sent to you
requesting your confirmation.


 

Can we ever trust the Teaching Authority again?

If you can’t read this font click here.

Can we ever trust the Teaching Authority again?

کیا ہم دوبارہ کبھی تربیتی اختیار پر بھروسہ کرسکتے ہیں؟

جس طرح آپ بات کرتے ہیں، آپ میرے ایمان کو جھنجوڑتے ہیں!

اگر تربیتی اختیار نے ماضی میں بہت سی غلطیاں کی ہیں، کیسے اِس پر دوبارہ بھروسہ کیا جائے گا!؟

آپ درست ہیں!

تربیتی اختیار چرچ میں اہم کردار ادا کرتا ہے۔ یہ خوراک اور صحت کمیشن کی مانند عوام کی حفاظت کی نگرانی کرنے کے کام کی طرح ہے۔

یہ چرچ کے لیے اچھا نہیں کہ تربیتی اختیار اپنی شہرت کو کھو چُکا ہے، اور ابھی تک کھو رہا ہے۔

چرچ کو مسیح کی نمک کے خراب ہونے کی تنبیہ کے بارے توجہ دینی چاہیے۔

نمک کا خراب ہونا؟

آپ کا کیا مطلب ہے؟

اِس کی شہرت کو دوبارہ بحال کرنے کے لیے ویٹیکن کو فوراَ غیر کار آمدہ اعمال کو روکنا چاہیے جو کہ یہ ہیں

  • بشپس کی مجلس مشائخ کی آزادی اور تعمیری سوچ بچار کو روکنا۔

    کے اثر کو مساوی کرنے کے لیےCuriaبشپس کی مجلس مشائخ کو ویٹیکن دوم کونسل نے،

    ترتیب دیا تھا۔

  • بشپس کانفرنس کے ذریعے شرعی مداوت کے اختیار میں مداخلت۔

    بشپس پوپ کے حلقہ کے نہیں ہیں، لیکن مسیح کے حلقہ کے جواپنے فرض کے ساتھ اپنی ڈایوسیس میں حکمرانی کرتے ہیں۔

  • صرف ہم خیال اُمیدواروں کو استفیٰ، مرکزی دفاتر، بین الاقوامی الہٰیاتی کمیشن، وغیرہ کے لیے مقرر کرنا۔

    چرچ کی قیادت میں اِسے دوسرے درجے کی اطاعت گزاری میں ہر وقت بہت اچھا کہنے والے کو مقرر کیا جاتا ہے۔

  • ماہر الہٰیات کا دباؤ جو سرکاری نظریات کی تردید کرنے کی جرات کرتے ہیں۔

    یہ کلیسیاء میں تخلیقی سوچ اور مفلس رات بازی کا پابند ہے“۔

Why we challenge the teaching authority Frequently asked questions Next?
culture shift the facts history true loyalty sense of faith
feminism? infallible? credibility? obedience? undermining?
What are the ‘rights’ of Catholics in the Church?
Do you have any questions for us? __Suggestions? __Remarks?

Wijngaards Institute for Catholic Research

The Institute is known for issuing academic reports and statements on relevant issues in the Church. These have included scholars’ declarations on the need of collegiality in the exercise of church authority, on the ethics of using contraceptives in marriage and the urgency of re-instating the sacramental diaconate of women.

Visit also our websites:Women Deacons, The Body is Sacred and Mystery and Beyond.

You are welcome to use our material. However: maintaining this site costs money. We are a Charity and work mainly with volunteers, but we find it difficult to pay our overheads.


Visitors to our website since January 2014.
Pop-up names are online now.

The number is indicative, but incomplete. For full details click on cross icon at bottom right.


Please, support our campaign
for women priests

Join our Women Priests’ Mailing List
for occasional newsletters:

Email:
Name:
Surname:
City:
Country:
 
An email will be immediately sent to you
requesting your confirmation.


 

Blind Obedience?

If you can’t read this font click here.

Blind Obedience?

اندھی فرمانبرداری؟

“پوپ، پوپ ہے، پوپ ہے!

چرچ مکمل فرمانبرداری کو سکھاتا ہے: یہ ذہن اور مرضی کی مذہبی اطاعت کو لازماَ رومن پاپائے اعظم کی شان میں تحقیق شدہ حاکمیت کی خاص طریقے سے دکھانا چاہیے تھا، یہاں کی بات نہیں کرتا، یہ کہ، اِسے اِس طرح دکھانا چاہیے کہ اُسExcathedraتک کہ جب وہ

کی اعلیٰ حاکمیت کو عزت کے ساتھ قبول کرنا چاہیے تھا، اُس کے عیاں ذہن اور مرضی کے مطابق، انصاف کو اُس کے ساتھ مخلصانہ طور پر جمے رہنا چاہیے تھا۔


Lumen Gentium, § 25c.

“یہ صرف کہانی کا آدھا حصہ ہے!

سچی فرمانبرداری اور وفاداری ہماری ذاتی شخصیت، ہمارے ذہن اور ہماری اپنی مرضی کے انکار پر کے مفہوم کی جانب اشارہ نہیں کرتی!

ویٹیکن دوم کونسل سکھاتی ہے:’وہ جو اختیار نیچے ہیں وہ احکامات کی تعمیل کرتے ہیں اور اپنے ذہن اور مرضی اور اپنی فطرت کے تحائف اور فضل کے ذرائع سے اپنے فرائض سے سبکدوش ہوتے ہیں۔

صرف اِس طرح، کونسل کہتی ہے کہ، فرمانبرداری انسانی شخص کی عظمت کو کم نہیں کرتی بلکہ یہ وسیع آزادی میں بلوغت کی طرف راہنمائی کرتی ہے جس کا تعلق خُدا کے بچے کے ساتھ ہے۔

Perfectae Caritatis § 14.

کیا آپ سینٹ اگنیشیئس لوئیلا کی تعلیم کو بھول چُکے ہیں؟

اُس نے کہا، اندھی فرمانبرداری، آپ کو مردہ لکڑی کے ٹکڑے بنانا چاہتی ہے جسے کوئی چلنے والی چھڑی کے طور پر اِستعمال کرسکتا ہے۔


فرمانبرداری کسی چیز کے سفید ہونے کا تقاضا کرتی ہے یہاں تک کہ اگر آپ خود دیکھتے ہیں کہ یہ کالی ہے۔!”

“جی ہاں اگنیشئیس نے ایسا کہا۔ لیکن اِسے لغور طور پر نہیں لینا چاہیے۔ کیا وہ ریاکاری کو نہیں چاہتا تھا، جس کے معاشرے کو اُس نے ذہین، راست باز، تنقیدی، اور ایجادی ہونے کے لیےپایا؟

فرمانبرداری کی مناسب تعریف ہمارے اخیتار کے لیے اشخاص کی آزادی اور سوچ بچار کے لیے انصاف کے ساتھ ہونی چاہیے۔ یہاں عمدہ تعریفیں موجود ہیں:

  • فرمانبرداری ہمارے اپنے دلوں میں سے خُدا کے بلاوے کو سُننا ہے: یہ ہمارے اندرونی اختیار کے تجربے، بیان اور معاشرے میں آشکارہ کرنے کے طور پر پیروی کرتی ہیں۔۔۔۔مسیح کی تابعداری، میری بشپ کی تابعداری خُدا کی تابعداری۔ اِس سب کی جڑیں سچ Barbra Schmitz بننے میں ہے کہ میں خُدا کی شبیہ پر ہوں۔

    Barbara Schmitz

  • حقیقی فرمانبرداری ہر وقت خدمت کرنے کے لیے تیار رہتی ہے، لیکن ہر خاکے کا آزادی اور تنقید جو اِس پر غیر تنقیدی دعویٰ کرتی Joan Chittister ہے۔

Why we challenge the teaching authority Frequently asked questions Next?
culture shift the facts history true loyalty sense of faith
feminism? infallible? credibility? obedience? undermining?
What are the ‘rights’ of Catholics in the Church?
Do you have any questions for us? __Suggestions? __Remarks?

Wijngaards Institute for Catholic Research

The Institute is known for issuing academic reports and statements on relevant issues in the Church. These have included scholars’ declarations on the need of collegiality in the exercise of church authority, on the ethics of using contraceptives in marriage and the urgency of re-instating the sacramental diaconate of women.

Visit also our websites:Women Deacons, The Body is Sacred and Mystery and Beyond.

You are welcome to use our material. However: maintaining this site costs money. We are a Charity and work mainly with volunteers, but we find it difficult to pay our overheads.


Visitors to our website since January 2014.
Pop-up names are online now.

The number is indicative, but incomplete. For full details click on cross icon at bottom right.


Please, support our campaign
for women priests

Join our Women Priests’ Mailing List
for occasional newsletters:

Email:
Name:
Surname:
City:
Country:
 
An email will be immediately sent to you
requesting your confirmation.


 

Undermining authority?

If you can’t read this font click here.

Undermining authority?

تباہ کُن اختیار؟

“آپ اپنی نکتہ چینی سے چرچ اراکین کی جڑیں کاٹ رہے ہیں!

آپ کی تحریر بہت سے سادہ لوگوں کو گمراہ کرے گی!

کیا یسوع نے نہیں کہا کہ جو کوئی اِن چھوٹوں سے جو مجھ پر ایمان لائے ہیں کسی کو ٹھوکر کھلاتا ہے اُس کے لیے بہتر ہے کہ بڑی چکی کا پاٹ اُس کے گلے میں لٹکایا جائے!”(متی 6،18)

“دلکش(دل پسند)”

باوفا اختلاف رائے رکھنے والے اکثر اپنی جرات کی وجہ سے مارے گئے، چرچ میں یہ مختلف نہیں ہے۔

آخر پر، یہ چرچ ہے جواِسے برداشت کرتا ہے۔”

“اختلاف رائے رکھنے والوں کو مٹا دینا چاہیے!

میں نے کہتا ہوں، چکی کے پاٹ کو اِستعمال کرنا جاری رکھیے۔

چرچ کی عام اچھائی کےلیے، اشخاص کے لیے کوئی رحم دکھانا نہیں چاہیے!”

عام اچھائی، ہا؟

مجھے آپ کو ایک کہانی بتانے دیجئے!

سمندر دے دور پانچ جنگی بیڑوں کےClowdesley Shovell22اکتوبر 1707پر، ایڈمرل سر ساتھ جنگ سے واپس انگلینڈ لانا۔

اُس وقت بحری سفر مشکل تھا۔ بہت زیادہ دھند کی وجہ سے بیڑے کو درست جگہ پر لے جانے کا احاطہ کرنا آسان نہیں تھا۔ لیکن پانچ کپتانوں کے صلاح مشورہ کرنے کے بعد اُس نے مشرق کا راستہ اختیار کیا۔

ایک بحری جہاز میں کام کرنے والا شخص نے بہت تجربے سے مختلف معینہ مقام کا حساب لگایا۔ راستے خطرت میں اختیار کیا گیا تھا۔ اُس نے ایڈمرل کو بتایا۔


انگلینڈ کے مغرب کی طرف پہاڑوں کی جانب چلناSeilly Islesچندگھنٹوں بعد سمندری بیڑا شروع ہوا۔ تین سمندر جہاز مکمل طور پر تباہ ہوگئے تھے۔ 2000سے زیادہ ملاح اور سپاہی مرگئے، جن میں خود ایڈمرل شامل تھا۔

کیا آپ نہیں سوچتے کہ غلط آدمی کو پھانسی (لٹکادیا گیا تھا) دی گئی تھی؟

Why we challenge the teaching authority Frequently asked questions Return to opening menu?
culture shift the facts history true loyalty sense of faith
feminism? infallible? credibility? obedience? undermining?
What are the ‘rights’ of Catholics in the Church?
Do you have any questions for us? __Suggestions? __Remarks?

Wijngaards Institute for Catholic Research

The Institute is known for issuing academic reports and statements on relevant issues in the Church. These have included scholars’ declarations on the need of collegiality in the exercise of church authority, on the ethics of using contraceptives in marriage and the urgency of re-instating the sacramental diaconate of women.

Visit also our websites:Women Deacons, The Body is Sacred and Mystery and Beyond.

You are welcome to use our material. However: maintaining this site costs money. We are a Charity and work mainly with volunteers, but we find it difficult to pay our overheads.


Visitors to our website since January 2014.
Pop-up names are online now.

The number is indicative, but incomplete. For full details click on cross icon at bottom right.


Please, support our campaign
for women priests

Join our Women Priests’ Mailing List
for occasional newsletters:

Email:
Name:
Surname:
City:
Country:
 
An email will be immediately sent to you
requesting your confirmation.