WOMEN CAN BE PRIESTSheader

Responsive image

HOME

REASONS
Urdu

DEFY THE POPE?!
Urdu

DEBATE
Urdu

MENU
Urdu

Nederlands/Vlaams Deutsch Francais English language Spanish language Portuguese language Catalan Chinese Czech Malayalam Finnish Igbo
Japanese Korean Romanian Malay language Norwegian Swedish Polish Swahili Chichewa Tagalog Urdu
------------------------------------------------------------------------------------
If you can't read this font click here.

کیا وہ یسوع تھا

جو یہ چاہتا تھا کہ عورتوں کو کاہنی خدمات سے محروم کیا جائے؟

The Congregation for Doctrine in Rome

Congregation for Doctrine
in Rome

  "یسوع مسیح نے عورتوں کو اُن بارہ شاگردوں کا حصہ بنانے کے لیے نہیں بلایا"۔
انٹر اِنسائنریساس 12-9

رُوم میں ایک جماعت کی لیے ہدایت نامہ
Ordinatio Sacerdotalis

Background music?


ایسا نہیں، ایسا نہیں ہے!

یسوع عورتوں کی آزادی چاہتا تھا۔ عورتوں کی مکمل طور پر کاہنت سے محروم اُس کے لیے مکمل طور پر غیر خصوصیت کی حامل تھی۔ دراصل اُس نے عورتوں کو کاہنت کا برابر حصہ بنایا جیسے کہ بپتسمہ کے ذریعے حصہ دِیا۔ یہ عورتوں کو اُس کی کاہنی خدمات میں حصہ لینے کی طرف مائل کرتا ہے۔

یسوع نے اسرائیل کے بارہ سربراہی قبائبل کی جگہ 12شاگردوں کو چنا۔ اُس دور کے کلچر کو مد نظروں رکھتے ہوئے، یہ قدرتی طور پر تھا کہ اُس نے اپنے مخصوص مقاصد کے لیے مردوں کو اِس کے لیے چُنا۔

 

تاہم یہ غلط ہے کہ کسی چیز سے دلیل نکلے کہ یسوع مسیح نے یہ ایسا کیا۔ عورتوں کو ایک موقع پر ایک عورت کو نہیں چنا، تمام زبانوں کے لیے مستقبل نمونہ قائم کرنے کے لیے آیا۔ اور ، نہ بھولے، عورتوں کو اپنے آخر کھانے میں یسوع نے یہ کہتے ہوئے پیش کیا:"میری یاد میں یہ کیا کرو"۔

تاہم یہ غلط ہے کہ کسی چیز سے دلیل نکلے کہ یسوع مسیح نے یہ ایسا کیا۔ عورتوں کو ایک موقع پر ایک عورت کو نہیں چنا، تمام زبانوں کے لیے مستقبل نمونہ قائم کرنے کے لیے آیا۔ اور ، نہ بھولے، عورتوں کو اپنے آخر کھانے میں یسوع نے یہ کہتے ہوئے پیش کیا:"میری یاد میں یہ کیا کرو"۔Marjorie Maguireاور Suzanne Tuneپڑھیں:  
  آخر انتہا نہیں، یسوع نے عورتوں کو اپنا شاگرد بنایا جنہوں نے کئی طریقوں سے کاہنی خدمات کی، عورتوں کو اُس کے مردوں میں سے جی اُٹھنے کی پہلی گواہ کہا جاتا ہے۔

Elisabeth Carrollپڑھیں: .


Go to the next step?


Further Readings!


You are in a simplified, ‘key point presentation’ mode.
To switch to academic mode, click here!

<